PictureGallery 11

.
.بئیر غرس یعنی '' غرس کا کنواں ''
دنیا کے تمام دوسرے کنووں سے کیوں منفرد ہے.
 
=================================================

بئیر غرس مدینہ منورہ کا وہ جنتی کنواں جس کے پانی سے نبی کریم صلی اللہ علیہ والہ وسلم کو انکے وصال مبارک کے بعد آخری غسل دیا گیا- عربی زبان میں ''بئیر'' کے معنی ''کنواں '' ہیں اور غرس مقامات کا نام ہے۔ جو اس کے گردا گرد ہیں -
بیئر غرس مدینہ منورہ کا وہ تاریخی کنواں ہے جس کا پانی آپ صلی اللہ علیہ والہ وسلم نوش فرماتے تھے - ایک دن نبی کریم صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ارشاد فرمایا کہ میں نے آج کی رات بہشت کے کنوؤں میں سے ایک کنویں پر صبح کی ہے.-
نبی کریم صلی اللہ علیہ والہ وسلم صبح کو بیئر غرس پر پہنچے اور وضو فرمایا - اپنا لعاب مبارک اس کنویں میں ڈالا اور جب . آپ کے سامنے شہد پیش کیا گیا تو اس شہد کو بھی آپ صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے اسی کنویں میں انڈیل دیا- ایک مرتبہ آپ صلی اللہ علیہ والہ وسلم اس کنویں پر تشریف لائے. اس سے وضو فرمایا اور بقیہ پانی اسی کنویں میں ڈال دیا.
آپ صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے سیدنا علی رضی اللہ عنہ کو یہ وصیت بھی فرمائی تھی کہ جب میں اس عالم سے سفر کروں یعنی ( وصال مبارک کے بعد ) تو '' بیئر غرس '' کے پانی کے سات مشکیزوں سے مجھے غسل دیا جائے اور پھر ہوا بھی یونہی کہ وصیت کے مطابق سیدنا محمد صلی اللہ علیہ والہ وسلم کو اسی کنویں کے پانی سے آخری غسل دیا گیا اور یوں یہ کنواں ہمیشہ کے لیے عاشقان رسول صلی اللہ علیہ والہ وسلم کی نگاہوں کا مرکز بن گیا اور اس کنویں کی نسبت ہمیشہ کے لیے آقا و سرکار سیدنا محمد صلی اللہ علیہ والہ وسلم سے جڑ گئی -
یہ کنواں مسجد قبا کی شمالی جانب تقریباً ایک کلو میٹر کے فاصلے محلہ
''قربان ' میں واقع ہے. جسکے گرد دیوار بنا کر اوپر چھت ڈال دی گئی ہے اور اب اس میں پانی بھی نہیں ہے تا ہم زایرین اور حجاج ذرا سی جستجو اور کوشش کریں تو اس مقام مبارک کی زیارت سے فیض یاب ہو سکتے ہیں -
================================

Next Gallery

PREVIOUS GALLERY

PIC GALLAR LIST